.

.
تازہ ترین
کام جاری ہے...

بس امریکہ معافی مانگے: بھارت

بدھ, دسمبر 18, 2013
نئی دہلی :  بھارت میں ایوان بالا یعنی راجیہ سبھا میں اراکین نے امریکہ میں بھارتی سفارت کار کے ساتھ ہونے والے ’ناروا سلوک‘ کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے امریکہ سے معافی کا مطابلہ کیا ہے۔
بھارت کے وزیر خارجہ سلمان خورشید نے کہا ہے کہ امریکہ میں ہندوستانی سفارت کار ’دیویانی كھوبراگاڑے کو بحفاظت ملک واپس لانے کی ذمہ داری میری ہے اور میں انھیں واپس لا کر دكھاؤں گا۔‘
نئی دہلی میں امریکی سفارت خانے کے باہر اس کے خلاف مظاہرے بھی ہوئے ہیں۔واضح رہے کہ دیویانی پر امریکہ میں ویزا قوانین کے سلسلے میں جعل سازی کے الزامات کا سامنا ہے اور اسی لیے انھیں برہنہ کرکے ان کی جامہ تلاشی لی گئی ہے۔

وزیرِ خارجہ نے بدھ کے روز بھارت کے ایوانِ بالا میں امریکہ میں بھارتی سفارت کار کی گرفتاری پر سوالوں کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’اس موضوع پر برسرِ اقتدار پارٹی اور اپوزیشن کو ایوان اور ایوان کے باہر یا میڈیا میں ایک سُر میں بولنا ہوگا۔۔۔ اس معاملے پر ہم مختلف رائے ظاہر نہیں کر سکتے۔ اگر ہم نے ایسا نہیں کیا تو یہ ملک کے مفاد میں نہیں ہوگا۔‘
انھوں نے کہا کہ ’امریکہ نے ہندوستانی سفارت کار کے ساتھ جو کیا ہے، وہ کسی بھی قیمت پر قابلِ قبول نہیں ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس بابت خبر موصول ہوتے ہی حکومت نے مناسب ذرائع سے فوری طور پر رد عمل کا اظہار کیا ہے۔‘
پچھلی پوسٹ
یہ سب سے پرانی پوسٹ ہے۔
جدید تر اشاعت

0 تبصرے:

ایک تبصرہ شائع کریں

اردو میں تبصرہ پوسٹ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کر دیں۔